سندھ حکومت غریب مزدورکی مدد کرنے کے بجائے منہ کا نوالہ چھین رہی ہے

کراچی؛ سندھ حکومت دیہاڑی دار مزدور وں غریب عوام کی مدد کرنے کی بجائے منہ سے نوالہ چھین رہی ہے، سندھ حکومت کی جانب سے 8 اگست تک صوبے میں لاک ڈاؤن کے فیصلے کومستردکر تے ہیں ان خیالات کا اظہار معروف سماجی رہنما مرزا عالم بیگ نے اپنے ایک بیان میں کیا۔

معروف سماجی رہنما مرزا عالم بیگ نے شہریوں سے بھی اپیل کی کہ وہ جلد از جلد اپنی ویکسین کرائیںتاکہ وبا سے چھٹکارا پا یاجاسکے۔

معروف سماجی رہنما مرزا عالم بیگ نے کہا کہ لاک ڈاؤن کا فیصلہ ایسے مہینے میں کیا گیا جب عوام ملک سے اپنی محبت کا اظہار کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا حکومت اب تک ٹیسٹنگ اور ویکسینیشن سے متعلق عوامی خدشات کو دور کرنے میں ناکام رہی ہے ۔ اور ویکسینیشن کے ناقص انتظامات کے باعث سینٹرز پر عوام گھنٹوں لائن میں کھڑی خوار ہو رہی ہے۔

معروف سماجی رہنما مرزا عالم بیگ نے کہا کہ لاک ڈاؤن کے سبب ملک بھر میں بے روزگاری حد سے تجاوز کر گئی ہے سندھ حکومت کی لاک ڈائون کے حوالے سے کوئی مثبت پالیسی ابھی تک سامنے نہیں آ سکی ہے اور نہ ہی لاک ڈائون کی صورت میں روزگار سے محروم افراد تک کوئی قابل قدر امداد پہنچائی جا سکی ہے۔

معروف سماجی رہنما مرزا عالم بیگ کا مزید کہنا تھا کہ کہ8 اگست تک صوبے میں پولیس اور ضلعی انتظامیہ کو لاک ڈائون کی آ ڑ میں مال بنانے کیلئے سڑکوں پر چھوڑدیا گیا ہے۔

معروف سماجی رہنما مرزا عالم بیگ نے کہا کہ زیادہ تر دکانوں، دفاتر فیکٹریوں میں پہلی تاریخ سے لے کر 8تاریخ تک مزدوروں کو تنخواہیں ادا کی جاتی ہیں مگر لاک ڈائون کے باعث مالکان کو اپنے مزدوروں میں تنخواہیں تقسیم کرنا ناممکن ہوجائے گا جس کے باعث لاکھوں لوگ فاقہ کشی کا شکار ہوسکتے ہیں۔

معروف سماجی رہنما مرزا عالم بیگ نے حکومت سندھ سے اپیل کی کہ لاک ڈائون کے عرصے میں صوبہ بھر کی عوام کی کفالت کی ذمہ داری حکومت اپنے کاندھوں پر لے اور صوبہ بھر کے ضرورت مند گھرانوں میں راشن پہنچانے کا باقاعدہ انتظام کرے اور صوبہ بھر کے کاروبار کو ٹیکس میں ریلیف مہیا کیا جائے۔

Leave a Reply