سکھر:سکھر آئی بی اے یونیورسٹی کے شعبہ بزنس ایڈمنسٹریشن نے “سرکلر اکانومی اینڈ ویسٹ مینجمنٹ – کلوزنگ دی لوپ فار سسٹین ایبلٹی” کے موضوع پر ایک سیمینار کا انعقاد کیا۔ سیمینار میں مختلف شعبوں کے ماہرین، محققین اور پالیسی سازوں نے سندھ میں سالڈ ویسٹ مینجمنٹ کے اہم مسئلے خصوصن کراچی پر، گہرائی سے بحث کیا، اور حل پیش کیئے۔

سیمینار تین سیشنز میں ترتیب دیا گیا تھا، جس میں صنعت کے ماہرین اور محققین شامل تھے۔ سکھر آئی بی اے یونیورسٹی کے بزنس ایڈمنسٹریشن ڈیپارٹمنٹ کے چیئرمین پروفیسر ڈاکٹر نیاز حسین گھمرو نے سیمینار میں مہمانوں اور شرکاء کا استقبال کیا۔

سیمینار کے پہلے سیشن میں سندھ سالڈ ویسٹ مینجمنٹ بورڈ کے ڈائریکٹر مانیٹرنگ اینڈ ایویلیوایشن صابر حسین شاہ نے “سندھ اور پاکستان میں ویسٹ مینجمنٹ کے چیلنجز اور مواقع” پر روشنی ڈالی۔ دوسرے سیشن میں انگلستان کی آسٹن یونیورسٹی کے پروفیسر ڈاکٹر جیاوئی وانگ نے “غیر ری سائیکل پلاسٹک ویسٹ اور سرکلر اکانومی” پر گفتگو کی۔ تیسرے اسپیکر سیشن کی قیادت یو ایم ٹی لاہور کی پروفیسر ڈاکٹر تفشین ایم اظہر نے کی، جنہوں نے “کراچی کے لیے سالڈ ویسٹ مینجمنٹ سسٹم اور ٹرانسپورٹیشن ماڈلنگ” کے موضوع پر خطاب کیا۔

مزید برآں، “شہری علاقوں میں سسٹین ایبل سالڈ ویسٹ مئنیجمینٹ کے لیئے باہمی تعاون کی حکمت عملی کے عنوان سے ایک پینل ڈسکشن کا انعقاد کیا گیا۔ پینل میں نامور ماہرین شامل تھے جن میں، سکھر آئی بی اے یونیورسٹی کے اکنامکس کے پروفیسر ڈاکٹر نیاز احمد بھٹو، سندھ سالڈ ویسٹ مئنیجمینٹ بورڈ میں مانیٹرنگ اینڈ ایویلیوایشن کے ڈائریکٹر صابر حسین شاہ، دادو کے ڈپٹی کمشنر فیاض حسین راہوجو، غوری گروپ آف کمپنیز کے ڈائریکٹر عامر غوری، انڈس کیمپس سکھر کی وائس پرنسپل محترمہ ریحانہ ثناء، اسسٹنٹ ڈائریکٹر چائلڈ پروٹیکشن اتھارٹی زبیر مہر، و دیگر سامعین بشمول فیکلٹی ممبران، پی ایچ ڈی اور ایم ایس/ایم۔ فل اسکالرز، طلباء اور سول سوسائٹی کے نمائندے شریک ہوئے۔

Leave a Reply